Friday, October 07, 2011

اے دین کے مجاہد تُو کہاں چلا گیا ہے

 کشمیر سے شیشان اور افغانستان سے عراق تک سجے محاذ ......گوانتا نامو، ابو غریب اور بگرام میں قید ہزاروں مجاہدین ......حرمین اور اقصیٰ کی مقدس سرزمین کو گھیرے ہوئے صلیبی فوجیں ......اللہ کی نصرت کے سہارے ڈٹے ہوئے مٹھی بھر مجاہدین 
یہ پوچھ رے ہیں۔ اے دین کے مجاہد! تو کہاں چلا گیا ہے؟
.............................................................................................


4Shared Download Link
.............................................................................................

اے دین کے مجاہد تُو کہاں چلا گیا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں
اپنوں کے خُوں میں ڈوبی کشمیر کی وہ گلیاں
جلتا ہوا فلسطین، روتا ہوا وہ شیشان
کچھ ہوش کر مسلمان! حرمین کی صدا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں
بہنوں کی عصمتوں کی دھجیاں اڑائی جائیں
وہ بیٹیوںکے سر سے چھنتی ہوئی رِدائیں
یہ دیکھ کر بھی غفلت کی نیند سو رہا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں
یہ مصطفیٰ کی امت کب سے سسک رہی ہے
کیا غیرتِ مسلماں ناپید ہو گئی ہے
ہر سمت خونِ مسلم یہ تجھ سے پوچھتا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں
محشر کے روز رب کو تم کیا جواب دوگے
اُن بھائیوں کے خون کا کیسے حساب دو گے
اللہ کے نبی کی، قرآن کی صدا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں
اے دین کے مجاہد تُو کہاں چلا گیا ہے
یہ جہاد کی فضائیں تجھے یاد کر رہی ہیں

1 تبصرے:

azamgarh merijaan said...

بہت خوب بھائ جان

Post a Comment

السلام علیکم
اگر آپ کو یہ مراسلہ اچھا یا برا لگا تو اپنے قیمتی رائے کا اظہار ضرور کیجیے۔
آپ کے مفید مشوروں کو خوش آمدید کہا جائے گا۔